سکیم برائے افزائش بھیڑ بکریاں

پاکستان کی معیشت کا زیادہ تر دارومد ار زراعت پر ہے ۔ زراعت کا بڑا ذیلی شعبہ افزائش مال مویشی (لائیو سٹاک) ہے اس کی اہمیت اس بات سے بھی ظاہر ہے کہ تقریبا35ملین آبادی بالواسطہ یا بلا واسطہ اس شعبے سے وابستہ ہے ۔ اس کی اہمیت کو مد نظر رکھتے ہوئے زرعی بینک نے اس شعبے کی ترقی کے لئے نمایاں اقدامات کئے ہیں ۔ جن میں بھیڑ بکریوں کے کاروبار سے وابستہ افراد کے لئے مذکورہ اسکیم کا اجراء بھی شامل ہے ۔ اس سکیم کی نمایاں خصوصیات یہ ہیں :

خصوصی اسکیم برائے گلگت بلتستان

زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈ دورد راز کے پسماندہ علاقوں میں زرعی ترقیاتی اور خوشحالی کیلئے ہمہ تن کوشاں ہے ۔ اسی نظریے کے تحت گلگت بلتستان کے علاقہ میں غربت کو کم کرنے اور اس علاقے کے عوام کی خوشحالی کے لئے مندرجہ ذیل خصوصی اسکیموں کا اجراء کیا گیا ہے جن کی تفصیلات مندرجہ ذیل ہیں ۔

آسان قرضہ سکیم

دیہی آبادی کابڑا حصہ نوجوانوں پر مشتمل ہے ، جنہیں ملکی ترقی میں مصروف ِ عمل کرنے،روزگار کیلئے بڑے شہروں کی طرف منتقلی کم کرنے اور کاروبار میں اضافے کے ذریعے ان کا معیارِ زندگی بہتر بنانے کی غرض سے زرعی ترقیاتی بینک نے”آسان قرضہ سکیم”کے نام سے نئی سکیم کا آغاز کیا ، جس کے تحت نوجوان زراعت سے وابستہ کاروبارشروع کر کے اپنے علاقے میں روز گار حاصل کر سکتے ہیں ۔

خشک رطب سکیم

(کھجوروں کو خشک کر کے چھوہارہ بنانے کی سکیم)

کھجور قدرت کا بے پایاں انعام ، جو کاربو ہائیڈریٹس ، معدنیات اور و ٹا منز کا بھر پو رخزانہ ہیں۔ اپنی بے پنا ہ غذائی افادیت کے پیش نظرکھجور عام غذا کے طور پر،مختلف مٹھائیوں اور شیریں لو ازمات میں شوق سے استعمال کی جاتی ہے ۔ کھجور کی خشک شکل چھوہارہ نہ صرف اندرونِ ملک بلکہ بیرون ملک برآمد کر کے کیثرزرِمبادلہ کے حصول کاذریعہ ہے ۔ لہذا اس صنعت کے فروغ کیلئے زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈ نے سکیم ہذا کا اجراء کیا تاکہ خواہشمند حضرات بینک کی مالی معاونت سے اپنے کاروبار کو جدید خطوط پر وسعت دے سکیں ۔ اس سکیم کے نمایاں خدوخال درج ذیل ہیں

خواتین روزگار سکیم

زرعی ترقیاتی بینک زراعت کی ترقی و فروغ میں ایک منفرد کردار ادا کر رہا ہے ۔ ملکی ترقی میں خواتین کا کردار ایک مسلمہ حقیقت ہے ۔ لہذا دیہی خواتین کو معاشی خود کفالت و خوشحالی کی طرف گامزن کرنے کیلئے زرعی ترقیاتی بینک نے خواتین روزگار سکیم کے نام سے موجودہ سکیم کا آغاز کیا تا کہ وہ معقول روزگار حاصل کرتے ہوئے نہ صرف اپنے خاندان کی آمدنی میں اضافہ کر سکیں بلکہ قومی ترقی میں اپنا کردار بھر پور طریقے سے ادا کرسکیں ۔ سکیم کے نمایاں خدوخال درج ذیل ہیں ۔

سکیم برائے تمباکو بھٹی

تمباکو ایک بڑی نقد آور فصل ہے ۔ جس کی کاشت اور بعدازاں اسکی پیداوار سے بنائی جانے والی دیگر قابل استعمال چیزوں کے کاروبار سے لاتعداد افراد کا روزگار وابستہ ہے ۔ تمباکو خشک کرنے کیلئے چھوٹے پیمانے پربھٹیوں کا قیام ان افراد کی اہم ضرورت تھی ۔ لہذا زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈ نے تمباکو کی کاشت کے علاقوں میں بھٹیوں کے قیام میں مالی معاونت کے لئے مذکورہ سکیم کا آغاز کیا ، جس کے نمایاں خدوخال درج ذیل ہیں ۔

سوغات شیریں اسکیم

(برائے گڑ)

گڑاپنے منفرد زائقے ، مٹھاس اور غذائیت کی وجہ سے دنیا بھر میں مشہور ہے ۔ جس سے کاروباری حضرات پورے سال کے دوران اور خصوصاََموسم سرما میں خاطر خواہ منافع کماتے ہیں ۔ زرعی پیداوار کی قدر و قیمت میں اضافے کی حکومتی کوششوں میں تعاون کے پیش نظر بینک ہذازرعی ترغیبات کے فروغ کیلئے ہمہ تن کوشاں ہے،سوغات شیریں اسکیم اس سلسلے کی ایک کڑی ہے ۔

اس سکیم کی نمایاں خصوصیات درج ذیل ہیں ۔

تحفظ اجناس اسکیم (چھوٹے گودام)

زرعی اجناس کو موسمی اثرات اور بیماریوں سے محفوظ کر کے ان کی قیمت فروخت بڑھانے اور چھوٹے کسانوں کو زیادہ سے زیادہ منافع پہنچانے کی غرض سے زرعی ترقیاتی بینک نے تحفظ ِ اجناس سکیم (چھوٹے سائز کے گودام کی تعمیر ) متعارف کرائی ہے جس کے نمایاں خدوخال درج ذیل ہیں۔

گودام رسید فنانسنگ اسکیم (For Rice and Maize Crop)

تعارف

دنیا بھرمیں جہاں غذائی اجناس کی پیداوار میں اضافہ اور تجارت سے متعلق بہت سے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ لائسنس شدہ گوداموں کی رسید کے ذریعے مالی اعانت کسانوں کی فصل کی کٹائی کے فوراً بعد اپنی مصنوعات کو مجبوراً فروخت کرنے سے بچانے میں اہم کردا ر ادا کر سکتی ہے۔ اور اجناس کے لین دین میں قرض کے ذریعے تحفظ فراہم کرتی ہے۔ اجناس کو لائسنس شدہ گودام میں ذخیرہ کیا جاتا ہے جو ایک رسید جاری کرتا ہے جس سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ اشیاء کو صحیح طور پر گودام میں رکھا گیا ہے۔

سکیم کا بنیادی مقصد کاشت کے بعد حاصل ہونے والی فصل کو زیادہ سے زیادہ محفوظ بنا کر چھوٹے کسانوں کو آئند ہ فصلوں کے لیئے درکار ضروریات الیکٹرانک
ویئر ہاؤس کی رسیدوں کے ذریعے پورا کرنے کیلئے سرمایہ فراہم کرنا ہے۔ تا کہ وہ اپنی پیداوار کی بہتر قیمت بھی حاصل کر سکیں اور اگلی فصل کیلئے درکار سرمایہ بھی حاصل کر سکیں۔