قرضہ سکیم برائے چائے کی کاشت، تیاری، پیکجنگ اور مارکیٹنگ

چائے دنیا میں استعمال ہونے والے تین بڑے غیر الکوحل مشروبات میں سے ایک ہے، جس کی دریافت در اصل چین میں ہوئی۔ فی الحال چائے کی صنعت چین سے دنیا کے دور دراز ممالک تک پھیل گئی ہے جو جنوبی نصف کرہ (کینیا) میں 30 عرض البلد سے لے کر شمالی نصف کرہ (جارجیا) میں 45 عرض البلد تک پھیلا ہوا ہے۔ اس کی فی کس سالانہ کھپت01 کلو سے زیادہ ہے۔ بدقسمتی سے پاکستان میں استعمال ہونے والی تمام چائے بیرونِ ملک سے درآمد کی جاتی ہے۔ پیٹرولیم اور خوردنی تیل کے بعد چائے تیسری شے ہے جس پر ہمارے اربوں روپے سالانہ خرچ ہوتے ہیں۔ مزید برآں، سال 2020 میں، پاکستان دنیا میں چائے درآمد کرنے والے ملکوں میں سرِفہرست تھا، جس کا تخمینہ تقریباً 590 ملین ڈالرہے۔

مذکورہ بالا حقائق کو مدِنظر رکھتے ہوئے،زرعی ترقیاتی بینک چائے کی پیداوار کو بڑھانے کے لیے کسانوں کو پہلے ہی قرض فراہم کر رہا ہے۔ اب اس اقدام کو مزیدبہتر بنانے کے لیے،چائے کی کاشت، تیاری، پیکجنگ اور مارکیٹنگ کے لیے بھی قرضہ جات فراہم کیئے جائیں گے۔ نیز بینک چائے کے کاشتکاروں کو مارکیٹنگ کی سہولیات فراہم کرنے کی ہر ممکن کوشش کرے گا۔

قرضہ سکیم برائے تیاری و پیکجنگ خام چینی (شکر)

خام چینی (شکر) سفید شکر کا صحت منداور بہتر متبادل ہے۔دنیا میں کی جانے والی تحقیق کے مطابق سفید چینی انسانی صحت کو نقصان پہنچا رہی ہے اور اسے” سفید زہر” جانا جاتا ہے۔ زرعی ترقیاتی بینک پہلے ہی کسانوں کو گُڑ بنانے کیلئے قرض کی سہولیات فراہم کر رہا ہے۔اس سکیم کے تحت خام چینی بنانے کے لیے بھی اسی طرز پر قرض کی سہولت فراہم کی جارہی ہے۔ اس سلسلے میں زرعی ترقیاتی بینک کسانوں کو ان کی مصنوعات کے فروغ اور مارکیٹنگ کیلئے یوٹیلیٹی سٹورز اور سپر مارکیٹس وغیرہ سے رابطہ میں معاونت بھی فراہم کرے گا۔

قرضہ سکیم برائے ٹرانسپورٹ(تھری ویلر لوڈر رکشہ)

کسانوں کو اپنی پیداوار  بروقت کھیت سے مارکیٹ تک پہنچانے او ر کاشتکاری کا ضروری سامان مارکیٹ سے فارم تک لانے میں کو آسانی کیلئے  بینک نے مندرجہ بالا سکیم متعارف کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔ جس کے تحت قرضہ برائے حصول تھری ویلر لوڈر رکشہ آسان شرائط  پر فراہم کیا جائے گا۔

سکیم برائے سویابین بطور گرین بینکنگ پراڈکٹ

سویا بین دنیا میں تیل کی پیداوار میں استعمال ہونے والی سب سے اہم فصل ہے۔ اس میں  18سے22  فیصد تیل ہوتا ہے۔ اور  40سے42  فیصد اعلیٰ کوالٹی پروٹین ہوتی ہیں  جو خوراک میں اشد ضروری ہیں۔ عام طور پر یہ کھانے کی صنعت میں آٹا،  مارجرین،   بسکٹ،  کینڈی،  دودھ،  سبزیوں کا پنیر،  لیسیتین اور بہت سی چیزوں کے لیے استعمال ہوتی ہے۔ موسمیاتی تبدیلیوں نے پانی کی کمی کے با عث تمام فصلوں کی پیداوار کو بُری طرح متاثر کیا ہے۔   اس لیے متبادل فصلیں اُگانے کی اشد ضرورت ہے۔ سویابین مٹی میں نائٹروجن کی بحالی اور  غذائی اجزاء کی افزودگی میں معاون ہے۔نیز یہ خشک سالی کے خلاف مزاحم فصل  ہے اور پانی کی کم دستیابی میں بھی زندہ  رہ سکتی ہے۔ لہٰذا زرعی ترقیاتی بینک  نے سویابین کی کاشت میں فروغ کیلئے  مندرجہ بالا سکیم متعارف کرائی ہے۔

قرضہ سکیم برائے خواتین (شعبہ گارمنٹس)

وطنِ عزیز کے پسماندہ علاقوں کی ہنر مند خواتین کی فلاح وبہبوداور معاشی خود کفالت زرعی ترقیاتی بینک کی ترجیحات کا حصہ ہے۔ اس مقصد کے حصو ل کیلئے گارمنٹس کے شعبے میں کام کرنے والی خواتین خصوصاً دستکاری، کشیدہ کاری،چادروں اور کپڑوں پر پھُلکاری اور مخصوص روائیتی کڑھائی کے فن کو اُجاگر کرنے کیلئے مذکورہ بالا سکیم کے تحت قرضہ جات کا آغاز کیا جا رہا ہے تا کہ یہ ہُنرمند خواتین با عزت روز گار بھی پاسکیں اور اپنی محنت کا معقول معاوضہ بھی حاصل کر سکیں۔ اس سلسلے میں بینک سلائی کڑھائی کے ضروری سامان، پیکنگ مٹیریل  اور مارکیٹنگ کیلئے قرضا جات فراہم کرے گا، نیز مصنوعات کی فروخت کیلئے مختلف غیر سرکاری تنظیموں اور رفاہی اداروں کیساتھ روابط میں معاونت بھی کی جائے گی۔

قوائد و ضوابط

سکیم برائے افزائش پھولدارپودے و گرین ہاؤسز

زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈنے  ملک میں پھولدار پودوں کی افزائش اور گرین ہاؤسز کے قیام کو ترقی دینے کیلئے اس سکیم کا آغاز کیا ہے۔تا کہ کسان اس سکیم کے تحت اپنی محنت وصلاحیتوں کو بروئے کار لاکرپھولوں کی کاشت اور بے موسم کے پھلوں اور سبزیوں کی کاشت کے ذریعے  اپنی آمدن میں اضافہ کر سکیں۔نیز غربت اور بیروزگاری کو کم کرنے میں اپنا کردار ادا کر سکیں

دیہی ترقیاتی سکیم برائے آ زاد جموں وکشمیر

زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈ آزاد کشمیر کے دیہی علاقوں میں چھوٹے کسانوں کی مالی معاونت کے ذریعے 300ڈیری یونٹس کا قیام عمل میں لا رہا ہے۔ قرض کا مارک اپ محکمہ لائیوسٹاک اینڈ ڈیری ڈیویلپمنٹ ڈپارٹمنٹ آزاد کشمیر ادا کرے گا۔

سکیم / پروجیکٹ کا بنیادی مقصد پرائیویٹ سطح پر موجودہ مال مویشی کی پیداوار کو بڑھانا، ترقی دینا اور پیداوار کو بڑھا نے کیلئے نئے نئے طریقے متعارف کروانا ہے۔

قرضہ سکیم برائے محفوظ چارہ

مرطوب موسم میں جب عموماً سبز چارہ مہیا نہیں ہوتا جانوروں کی افزائش،ان کو بیماریوں سے محفوظ رکھنے اور مکمل توانائی بحال رکھنے کیلئے محفوظ شدہ چارہ (جو کہ Silageکہلاتا ہے) کا استعمال کیا جاتا ہے جو نہایت مفید اور موثر ہے۔ اس مقصد کو سامنے رکھتے ہوئے زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈ نے اس سکیم کا اجراء کیا ہے جسکی اہم خصوصیات درج ذیل ہیں۔

قرضہ سکیم برائے Oil Expeller

اس سکیم کا بنیادی مقصد مختلف اقسام کے بیج مثلاً کینولا، ریپ سیڈ، سورج مُکھی اور سویابین وغیرہ سے کم لاگت میں خوردنی تیل حاصل کرنا ہے۔اِس ضمن میں آئل ایکسپیلر مشین کم وقت میں زیادہ فائدے کی وجہ سے کسانوں کی توجہ اور دلچسپی کا باعث ہے۔اور چھوٹے کسانوں میں بیروزگاری اور غربت کم کرنے میں بھی مدد گار ہے۔علاوہ ازیں محصولات میں اضافے اور تیل کے ساتھ ساتھ ضمنی اشیاء کے حصول اور استعمال میں بھی معاون ہے۔ ان تمام فوائد کو مدِ نظر رکھتے ہوئے بینک نے مذکورہ بالا سکیم کا اجراء کیا ہے۔سکیم کے اہم نکات درج ذیل ہیں۔

سکیم برائے افزائش بھیڑ بکریاں

پاکستان کی معیشت کا زیادہ تر دارومد ار زراعت پر ہے ۔ زراعت کا بڑا ذیلی شعبہ افزائش مال مویشی (لائیو سٹاک) ہے اس کی اہمیت اس بات سے بھی ظاہر ہے کہ تقریبا35ملین آبادی بالواسطہ یا بلا واسطہ اس شعبے سے وابستہ ہے ۔ اس کی اہمیت کو مد نظر رکھتے ہوئے زرعی بینک نے اس شعبے کی ترقی کے لئے نمایاں اقدامات کئے ہیں ۔ جن میں بھیڑ بکریوں کے کاروبار سے وابستہ افراد کے لئے مذکورہ اسکیم کا اجراء بھی شامل ہے ۔ اس سکیم کی نمایاں خصوصیات یہ ہیں :